شرد پوارکی میٹنگ میں 50 اراکین اسمبلی موجود، شیو سینا نے بی جے پی حکومت کے خلاف سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا

ممبئی: مہاراشٹرمیں بی جے پی اوراجیت پوارکی حکومت سازی کے بعد بھونچال آگیا ہے۔ این سی پی، شیو سینا اورکانگریس تینوں سیاسی جماعتیں اپنی آگےکی حکمت عملی تیارکرنے میں مصروف ہیں۔ اس دوران این سی پی سربراہ شرد پوارکی رہائش گاہ پراراکین اسمبلی کے ساتھ ہونے والی میٹنگ میں 50 اراکین اسمبلی کے موجود ہونےکی خبرہے۔ اس طرح سے صرف 4 اراکین اسمبلی باغی اجیت پوارکے ساتھ گئے ہیں۔ حالانکہ خاص بات یہ ہے کہ اجیت پوارکے ساتھ رہےدھننجے منڈے بھی شرد پوارکی میٹنگ میں موجود ہیں۔ این سی پی رکن اسمبلی دلیپ راؤ بنکرنے ٹوئٹ کرکےکہا ہےکہ ‘میری عقیدت شرد پوارکے ساتھ ہے’۔  اجیت پوارکےساتھ گئے این سی پی اراکین اسمبلی دلیپ بنکر، سنیل شیلکے، سنیل بھوسرا اور سنجے بنسوڑشرد پوارکی میٹںگ میں پہنچ گئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق این سی پی کی میٹنگ میں طے ہوا ہےکہ اجیت پوارکو قانون سازپارٹی (سی ایل پی) لیڈرکےعہدے سے ہٹایا جائےاورجلد ازجلد اتحاد کےلئےنیا ریزولیشن تیارکرکےگورنرسے ملا جائے۔ میٹنگ میں شرد پوارنےمانا کہ 12-11 اراکین اسمبلی اجیت پوارکے ساتھ گئے تھے، لیکن ان میں سے پانچ اراکین اسمبلی لوٹ آئے ہیں۔ شرد پوارکے گھرپرایک گھنٹے زیادہ سے میٹنگ چل رہی ہے۔وہیں دوسری طرف شیوسینا کی میٹنگ میں پارٹی سربراہ ادھو ٹھاکرے نے پارٹی کے اراکین اسمبلی کومحتاط رہنے اورصبرکرنے کی تلقین کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ صبرکریں، مہاراشٹر میں ہم حکومت بنائیں گے۔ اس دوران انہوں نے کہا ہے کہ پارٹی کے اراکین اسمبلی ممبئی میں ہی رہیں۔ ممبئی سے باہرنہ جائیں۔ ادھوٹھاکرے نے اراکین اسمبلی سے کہا کہ وہ اس حالات کا سامنا کریں۔ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ہم پوری طرح سے مطمئن ہیں اورہم ہی حکومت بنائیں گے۔ اس دوران شیوسینا نےدیویندرفڑنویس کے وزیراعلیٰ اوراجیت پوارکے نائب وزیر اعلیٰ کے طورپرحلف لینے کے خلاف سپریم کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ اس حکومت کے خلاف شیوسینا نے عرضی داخل کی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *